- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

پاکستان اگلے ہفتے سعودی عرب کو ایک ارب ڈالر کی ادائیگی کردےگا

چین پاکستان کو کرنسی سویپ معاہدے کے تحت ڈیڑھ ارب ڈالر دےگا، دونوں ممالک کے درمیان کرنسی سویپ معاہدہ جلد بحال کرنے پرغور کیا جارہا ہے۔ ذرائع وفاقی وزارت خزانہ

0 12

پاکستان اگلے ہفتے سعودی عرب کو ایک ارب ڈالر کی ادائیگی کردےگا، چین پاکستان کو کرنسی سویپ معاہدے کے تحت ڈیڑھ ارب ڈالر دےگا، دونوں ممالک کے درمیان کرنسی سویپ معاہدہ جلد بحال کرنے پرغور کیا جارہا ہے۔

پاکستان اگلے ہفتے سعودی عرب کو ایک ارب ڈالر کی ادائیگی کردےگا

ذرائع وفاقی وزارت خزانہ کے مطابق پاکستان اور چین کے درمیان کرنسی سویپ معاہدہ جلد بحال کرنے پرنظرثانی کی جارہی ہے۔

 

- Advertisement -

جس کے تحت چین پاکستان کو کرنسی سویپ معاہدے کے تحت ڈیڑھ ارب ڈالر دے گا۔ وزارت خزانہ ذرائع نے مزید بتایا کہ پاکستان سعودی عرب کو ایک ارب ڈالر کی ادائیگی اگلے ہفتے کردے گا۔

 

- Advertisement -

اسی طرح انٹرنیشنل پریس ایجنسی کے مطابق پاکستان اور چین کے درمیان باہمی معاہدے ہیں لیکن پاک چین معاہدوں کی تفصیل شیئر نہیں کرسکتے۔

 

واضح رہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان کرنسی سویپ معاہدہ نومبر2018 میں ہوا تھا جس کے تحت دونوں ممالک کی مقامی کرنسی میں دوطرفہ تجارت کو فروغ دینے سے زرمبادلہ کے ذخائر اور ادائیگیوں کے توازن میں سہولت ملے گی معاہدے پر عمل درآمد سے مقامی کرنسی میں تجارت کیلئے حجم دس ارب یوآن سے بڑھا کر بیس ارب یوآن کرنے پر اتفاق کیا گیا تھا،

 

پاکستانی کرنسی میں تجارت کیلئے کرنسی سویپ کا سائز 165 ارب روپے سے بڑھا کر 351 ارب روپے کرنے پربھی اتفاق ہوا تھا. پاکستان و چین کے درمیان مقامی کرنسیوں میں تجارت بڑھنے سے نہ صرف زرمبادلہ ذخائر پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے بلکہ ادائیگیوں کے توازن کے حوالے سے بھی سہولت ملے گی

 

اور دونوں ممالک کے درمیان تجارت کو بھی فروغ ملے گا روپے کو ڈالرکی قید سے آزاد کرانے کیلئے پاکستان کو ڈالر اکانومی سے نکلنے کیلئے کوششیں کرنا ہوں گی اور ڈالر کے علاوہ دیگر کرنسیوں میں تجارت کو فروغ دینا ہوگا اس اقدام سے روپے کو بہت سنبھالا ملے گا تاہم امریکی دباﺅ بڑھے گا.

 

امریکی دباﺅ کی وجہ سے ہی اس معاہدے پر دوسال سے عمل درآمد شروع نہیں ہوسکا تھا پاکستان کا چین سے در آمدی بل 13 ارب ڈالرکے لگ بھگ ہے جبکہ اسکے مقابلہ میں برآمدات بہت کم ہیں اگر چین کی جانب سے پاکستانی مصنوعات کیلئے بھی آسیان ممالک والی سہولیات مل جاتی ہیں تو اس سے برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ہوگا۔

 

 

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -