- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

کیا سعودی عرب واقعی اسرائیل کو تسلیم کرنے جا رہا ہے؟

اسرائیلی فلائٹس کو مکہ مکرمہ کے اوپر پرواز کی اجازت دے دی گئی،ویڈیو وائرل

0 11

امریکی اسٹیبلشمنٹ کے ارادے نہ سہی کم از کم ڈونلڈ ٹرمپ نے مسلم ممالک سے اسرائیل کو تسلیم کروانے ا ور ان کے ساتھ کاروباری معاملات طے کروانے کی ہر سعی کر چھوڑی تھی۔

 

امریکہ نے تین مسلم ممالک کو آسانی سے اسرائیل کو تسلیم کروا لیااور ان کے ساتھ کاروباری معاملات کے معاہدے بھی طے پا گئے۔تاہم سعودی عرب کے حوالے سے ابھی تک سارے شش وپنج میں مبتلا ہیںکہ وہ کیا کرے گا۔

 

اس حوالے سے اسرائیلی اخبار نے دعویٰ کیا تھا کہ سعودی عرب بھی جلد اسرائیل کو تسلیم کر لے گا۔جبکہ شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا تھا کہ اگر میں نے ایسا کیا تو میرے اپنے لوگ مجھے قتل کر دیں گے۔

 

- Advertisement -

حالانکہ گزشتہ دنوں ڈونلڈ ٹرمپ نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ بہت جلد دس اسلامی ممالک اسرائیل کو تسلیم کریں گے اور سعودی عرب بھی ان میں سے ایک ہو گا۔

 

تاہم ابھی تک سعودی عرب نے اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا مگر اسے تسلیم کرنے کی راہ ضرور اپنا لی ہوئی ہے

 

 

 

- Advertisement -

کیونکہ اسرائیلی فلائٹس کے لیے سعودی عرب کا ہوائی راستہ بند تھا مگر گزشتہ روز اسرائیل سے انڈیا جانے والی فلائٹ کو نہ صرف سعوی ایئر سپیس استعمال کرنے کی اجازت دی گئی بلکہ مکہ اور جدہ کے اوپر سے گزرنے کی بھی اجازت دی گئی۔

 

ایک پائلٹ نے جہاز کا وہ وروٹ سوشل میڈیا پر شیئر کیا جہاں سے اسرائیلی پرواز گزرتے ہوئے انڈیا کی طرف آئی تھی۔

 

سعودی حکام کے مطابق اب اسرائیل کی سبھی فلائٹس انڈیا یا دوسرے ممالک آںے کے لیے ان کی ایئر اسپیس استعمال کر سکتے ہیں۔

 

جبکہ اس سے قبل اسرائیلی پروازیں انڈیا آنے کے لیے کافی زیادہ سفر کر کے گلف کے راستے آیا کرتی تھیں۔

 

سوچنا یہ ہے کہ مسلم ممالک فلسطین کے ساتھ کھڑے رہیں گے یا پھر کاروباری معاملات ان پر اتنے حاوی ہو جائیں گے کہ وہ مسلمانوں کی حمایت چھوڑ کر یہودیوں کی قطاروں میں جا کھڑے ہوں گے۔

 

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -