- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

دُبئی میں نوجوان کے شیشہ پینے کا شوق گرل فرینڈ کی موت کی وجہ بن گیا

عرب نوجوان محبوبہ کی جان بچانے کی بجائے خود گھر سے باہر نکل آیا

0 87

دُبئی میں ایک نوجوان نے مصیبت کے وقت اپنی گرل فرینڈ کی جان بچانے کی بجائے اپنی جان کو ترجیح دی جس کی وجہ سے وہ اپنی زندگی تو بچانے میں کامیاب ہو گیا تاہم اس کی محبوبہ زندگی کی بازی ہار گئی۔

دُبئی میں نوجوان کے شیشہ پینے کا شوق گرل فرینڈ کی موت کی وجہ بن گیا

یہ وقعہ لہباب کے ایک دیہاتی علاقے میں پیش آیا۔ جہاں نوجوان کا شیشہ پینے کا شوق اس کی گرل فرینڈ کی موت کا سبب بن گیا۔

 

- Advertisement -

عدالت نے نوجوان کو عمر قید کی سزا سُنا دی اور دو لاکھ درہم محبوبہ کے لواحقین کو بھی ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔ استغاثہ کی جانب سے بتایا گیا کہ لہباب کے ایک گھر میں عرب نوجوان اپنی ایتھوپیائی دوست کے ساتھ شیشہ پینے میں مصروف تھا

 

جب کوئلے کے ایک ٹکڑے نے صوفے میں آگ سلگا دی۔ اس دوران ملزم خود تو باہر نکل گیا تاہم اس کی محبوبہ دھوئیں کی وجہ سے دم گھٹنے اور جھلس جانے سے مر گئی۔

 

- Advertisement -

اس مقدمے میں نوجوان کو محبوبہ کی موت کا ذمہ قرار دے کر جیل اور جرمانے کی سزا سُنائی گئی تھی۔ ملزم نے اس فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی تھی۔

 

ملزم کے وکیل نے بتایا کہ اس کا موکل اپنی محبوبہ کے ساتھ ایک دیہاتی فارم ہاؤس میں موجود تھا۔ جہاں وہ شیشہ پی رہے تھے تاہم غلطی سے کوئلے کا ایک ٹکڑادروازے سے 2 میٹر دُور گر گیا، جن کی وجہ سے صوفوں میں آگ لگ گئی۔

 

جب انہوں نے بیٹھک سے باہر آگ دیکھی تو اپنی جان بچانے کے لیے باہر بھاگنے کی کوشش کی۔ نوجوان کا کہنا تھا کہ اس نے گرل فرینڈ کو بھی باہر نکالنے کی کوشش کی مگر وہ خوفزدہ تھی۔

 

اس لیے وہ اپنی جان بچانے کے لیے باہر نکل گیا ، مگرلڑکی جھلس کر جان گنوا بیٹھی۔ اس حادثے میں اس کا کوئی قصور نہیں تھا۔ اس کی سزا معاف کی جائے۔

 

عدالت نے ملزم کی قید کی سزا معاف کر دی تاہم گرل فرینڈ کے گھر والوں کو دیت کی مد میں 2 لاکھ درہم کی ادائیگی کا حکم دیا ہے ۔

 

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -