- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

ڈی آر ایس کے دور میں کھیلتا تو میری وکٹوں کی تعداد 1000 ہوتی :وسیم اکرم

اگر میری بولنگ پر کیچز نہ چھوڑے جاتے تب میری ٹیسٹ وکٹوں کی تعداد 1500 ہوتی:سابق کپتان

0 10

قومی ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم کا کہنا ہے کہ اگر ان کے دور میں ڈی آر ایس سسٹم ہوتا تو ان کی وکٹوں کی تعداد 1000 ہوتی۔

ڈی آر ایس کے دور میں کھیلتا تو میری وکٹوں کی تعداد 1000 ہوتی :وسیم اکرم

این بی پی سپورٹس کمپلیکس میں گفتگو کرتے ہوئے سابق ٹیسٹ کپتان اور اپنے دور کے عظیم آل راؤنڈر وسیم اکرم کا کہنا تھا کہ اگر میرے کرکٹ کیریئر کے دوران امپائر کے فیصلے پر نظر ثانی کرنے والا جدید ٹیکنالوجی پر مبنی ڈی آر ایس سسٹم رائج ہوتا تو میں ٹیسٹ کرکٹ میں 1000 وکٹیں حاصل کرتا اور اگر میری بولنگ پر کیچز نہ چھوڑے جاتے تب میری ٹیسٹ وکٹوں کی تعداد 1500 ہوتی ۔

 

- Advertisement -

وسیم اکرم کا مزید کہنا تھا کہ وہ جانتے ہیں کہ دورہ نیوزی لینڈ میں 14 دن تک قید تنہائی میں رہنے والے پاکستانی کرکٹر سخت دباؤ کا شکار ہوں گے،

 

 

- Advertisement -

انہیں بھی آسٹریلیا میں 6 دن سیکیور ببل ماحول میں رہنا پڑا تھا اس لیے وہ جاتنے ہیں کہ ان حالات میں کسی انسان پر کیا گزرتی ہے تاہم کھلاڑی بہت پرعزم نظر آرہے ہیں۔

 

وسیم اکرم کا کہنا تھا کہ دورہ نیوزی لینڈ ہمیشہ مشکل ہوتا ہے، قومی ٹیم کے لیے اگلے 10 دن انتہائی اہم ہونگے، سنا ہے کہ پاکستانی ٹیم کو جو وقت ملا ہے کہ قومی ٹیم صبح ٹیسٹ کی تیاری کرے گی اور شام کو ٹی ٹونٹی سیریز کے لیے ٹریننگ کرے گی۔

 

وسیم اکرم کا مزید کہنا تھا کہ قومی ٹی ٹونٹی ٹیم نیوزی لینڈ سے بہتر ہے لیکن ٹیسٹ کرکٹ میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو مہمان ٹیم پر سبقت حاصل ہے،

 

ٹیسٹ کرکٹ میں ہمارے بائولرز کو مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اوران کو نتائج حاصل کرنے لیے اپنی لائن و لینتھ بہتر کرناہوگی، ہم نے اپنے دور میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو مشکلات میں ڈالا تھا، ان کے خلاف بھرپور اعتماد کے ساتھ کھیلتے تھے۔

 

 

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -