- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

ن لیگ کے اگلے جلسے میں بلاول بھٹو نہیں آئیں گے

آصف زراداری نے نواز شریف کا اہم مطالبہ بھی مسترد کر دیا،حکومت اور اپوزیشن کے رابطے ہو رہے ہیں، اہم رول اسد قیصر اور پرویز خٹک ادا کر رہے ہیں۔ معروف صحافی رانا عظیم

0 65

معروف صحافی رانا عظیم کا کہنا ہے کہ حکومت اور اپوزیشن کے رابطے ہو رہے ہیں، اہم رول اسد قیصر اور پرویز خٹک ادا کر رہے ہیں۔تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی رانا عظیم کا کہنا ہے کہ میاں نواز شریف نے گذشتہ دو دون میں تین مرتبہ آصف علی زرداری ، مولانا فضل الرحمن ، محمود اچکزئی ، اسفند یار ولی اور اختر مینگل سے باقاعدہ رابطے کیے ہیں۔

 

ان سے کہا گیا کہ سینیٹ الیکشن کا بائیکاٹ کریں۔آصف زرداری نے کہا ہے کہ ہم سینیٹ الیکشن ہر صورت لڑیں گے۔میاں نواز شریف کے فون رائیگاں گئے۔انہوں نے مزید نواز کو بھی ٹاسک دیا ہے۔اگلا جلسہ جو بھی ن لیگ کرائے گی اس میں بلاول بھٹو نہیں آئیں گے۔حکومت اور اپوزیشن کے بیک ڈو رابطے ہو رہے ہیں۔

اور ان رابطوں میں سب سے اہم کردار پرویز خٹک اور اسد قیصر ادا کر رہے ہیں۔

 

- Advertisement -

- Advertisement -

اس سے قبل رانا عظیم نے دعویٰ کیا کہ پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں نے فیصلہ کیا ہے کہ اگلے احتجاجی مظاہروں کا ہر صورت پرتشدد بنایا جائے گا۔پی ڈی ایم کی تینوں بڑی جماعتوں نے خواتین ونگز بنانے کا فیصلہ کیا ہے،ان کو متحرک کیا جائے گا۔اس کے علاوہ کچھ ناجوانوں اور باریش لوگوں کو بھی متحرک کیا جائے گا،ان کے ہاتھوں میں ڈنڈے دئیے جائیں گے۔

 

یہ کام لانگ مارچ سے قبل کیا جائے گا۔لانگ مارچ سے قبل ایسی تحریک چلائی جائے گی کہ عوام میں تاثر دیا جائے کہ ہمارے خواتین اور بزرگوں پر تشدد کیا جا رہا ہے اور ہمارے ساتھ زیادتی کی جا رہی ہے۔ان کا پلان ہے کہ جہاں بھی احتجاج ہو گا وہاں قانون نافذ کرنے والے اداروں سے پہلے خواتین مقابلہ کریں گی اور اپنا راستہ صاف کریں گی۔ جب خواتین کو روکا جائے گا تو پھر نوجوان اور بزرگ بھی آگے آئیں گے۔

 

ایسا ماحول بنایا جائے گا کہ لگے کہ ہمارے اوپر تشدد کیا جا رہا ہے۔پی ڈی ایم نے 13 کیمرے بھی بنا لیے ہیں،کچھ صحافیوں کو بھی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔خاص طور پر کچھ لوگوں کو صحافی بنا کر میدان میں لایا جائے گا جو فوٹیج بنا کر سوشل میڈیا پر ڈال دیں گے۔دوسری جانب ضلعی انتظامیہ بہاولپور نے پی ڈی ایم کی احتجاجی ریلی منعقد کرنے پر منتظمین اور رہنماؤں کیخلاف مقدمات درج کرلیے گئے۔

 

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -