اہم خبریںکھیل

امپائر سے تلخ کلامی، ملتان سلطانز کے منیجر پر پابندی

ملتان سلطانز کے منیجر حیدر اظہر کو امپائرز کے ساتھ گرما گرم تبادلہ کرنے پر ممکنہ پابندی کا سامنا ہے۔

ممکنہ اپیل میں ناکامی کے نتیجے میں وہ اگلے سال ایک میچ سے باہر ہو جائیں گے۔ حیدر اظہر نے پی ایس ایل فائنل میں وائڈز پر احتجاج کیا جس کے دوران حالات مزید خراب ہوگئے۔

پی ایس ایل 8 کے فائنل میں لاہور قلندرز نے ملتان سلطانز کو ایک رن سے شکست دے دی، سلطانز کے کھلاڑی اور آفیشلز ٹرافی کے اتنے قریب آنے کے بعد ہارنے پر کافی مایوس نظر آئے۔ انہوں نے ریزرو امپائر آصف یعقوب سے کچھ وائیڈ بالز کالز پر احتجاج بھی کیا۔ پھر جب فیلڈ امپائر واپس آئے تو ٹیم منیجر اور سی او او حیدر اظہر نے راشد ریاض سے شکایت کی۔

یہ بھی پڑھیں: بریٹ لی نے بابر اعظم کو پسندیدہ بلے باز قرار دے دیا۔

اس نے جواب دیا کہ وہ ابھی اس بارے میں بات نہیں کر سکتے۔ ایسے میں انگلینڈ کے امپائر ایلکس وارف بھی وہاں پہنچ گئے۔ وہ بھی بات سمجھ گیا اور حیدر کو اصول بتانے لگا۔ حالات بگڑ گئے اور تلخ تبادلہ شروع ہو گیا۔ راشد اور پی سی بی آفیشل عون زیدی نے معاملے کو ٹھنڈا کرنے کی پوری کوشش کی۔

پی ایس ایل کے ڈائریکٹر عثمان واہلہ بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گئے۔ پی سی بی نے معاملے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ضابطہ اخلاق کا لیول تھری لگاتے ہوئے ملتان آفیشلز پر ایک میچ کی پابندی عائد کر دی۔ مزید یہ کہ ان سے کہا گیا کہ وہ فیصلہ قبول کر کے اس پر دستخط کریں۔ لیکن حیدر نے دوپہر 2 بجے سماعت کا مطالبہ کیا۔ معاملے کی سماعت سری لنکن میچ ریفری روشن ماہنامہ کے سامنے ہوئی جہاں امپائرز اور ملتان کے منیجر نے اپنا موقف دیا۔

اس نے ایک موقع پر غیر مشروط معافی بھی مانگ لی لیکن ریفری نے پھر بھی سزا کو برقرار رکھا۔ حیدر کے پاس اب بھی اپیل کا حق ہے۔ سزا نہ برطرف کی گئی تو حیدر اظہر اگلے سال ملتان سلطانز کے پہلے میچ میں بطور منیجر خدمات انجام نہیں دے سکتے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button