عمران نیازی کا مقصد اداروں کو دباؤ میں ڈال کر یرغمال بنانا ہے، شرجیل میمن

شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ عمران نیازی کا مقصد اداروں کو دباؤ میں ڈال کر یرغمال بنانا ہے۔

صوبائی وزیر اطلاعات سندھ شرجیل انعام میمن نے عمران خان کے مارچ کے اعلان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ عمران نیازی قوم کو یرغمال بنانے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران نیازی کی پاکستان میں نہ پہلے دلچسپی تھی نہ اب ہے، ان کو اپنے اقتدار سے دلچسپی ہے ، جاہتے ہیں کہ اقتدار کی کرسی سے چپٹے رہیں۔

شرجیل انعام میمن کا کہنا تھا کہ عمران نیازی ملک میں افراتفری کی سازشیں کر رہے ہیں، ان کا مقصد ریاستی اداروں کو دباؤ میں ڈال کر یرغمال بنانا ہے۔

صوبائی وزیر اطلاعات سندھ نے کہا کہ عمران نیازی چاہتے ہیں کہ ان کو قوم پر دوبارہ تھوپا جائے اور ہر بار ان کو پیرا چھوٹ سے اتارا جائے۔

Advertisement

انہوں نے یہ بھی کہا کہ عمران خان بتائیں کہ وہ انتخابی اصلاحات سے کیوں بھاگنا چاہتے ہیں، وہ کیوں نہیں چاہتے کہ الیکشن ریفارمز ہوں؟

صوبائی وزیر اطلاعات سندھ کا کہنا تھا کہ ہم بھی چاہتے ہیں کہ انتخابات ہوں لیکن اس سے قبل الیکشن ریفارمز ہونے چاہیے۔

شرجیل انعام میمن کا یہ بھی کہنا تھا کہ عمران نیازی اداروں کو ڈکٹیٹ کرنا چاہتے ہیں،15 دن پہلے کہتے تھے ادارے نیوٹرل نہیں ہونے چاہئیں ، آج کہتا ہے ادارے نیوٹرل ہونے چاہئیں۔

صوبائی وزیر اطلاعات سندھ شرجیل انعام میمن کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کے قول و فعل میں تضاد ہے، کچھ بھی ہو جائے حکومت عمران نیازی کی بلیک میلنگ میں نہیں آئے گی۔

واضح رہے کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے 25 مئی کو اسلام آباد لانگ مارچ کا اعلان کیا ہے۔

پشاور میں کورکمیٹی کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ پی ٹی آئی کور کمیٹی اجلاس میں لانگ مارچ کا فیصلہ کرلیا ہے اور میں صرف تحریک انصاف کے کارکنان کو نہیں بلکہ پوری قوم کودعوت دے رہا ہوں کہ لانگ مارچ میں شرکت کریں۔

چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ ان چوروں کی موجودگی میں قوم کا کوئی مستقبل نہیں ہے، اقتدار میں آنے والوں پر کیسز ہیں،  مفرور باہر سے بیٹھ کر فیصلے کر رہا ہے،  چوروں کو وزیراعظم اور وزیراعلیٰ بنا دیا گیا، یہ قوم کی توہین ہے، ملک کا وزیراعظم ضمانت پر ہے، یہ اقتدارمیں صرف اپنے مقدمات ختم کرنے آئے تھے، اس ملک کے 22 کروڑ عوام کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا۔

عمران خان نے کہا تھا کہ ہمارامطالبہ ہے کہ اسمبلی تحلیل کریں اورالیکشن کا اعلان کریں اور اداروں نے کہا ہے کہ ہم نیوٹرل ہیں تو پھرنیوٹرل رہیں، ابھی بتارہا ہوں ،  2 دن پہلے انٹرنیٹ بند کردیا جائے گا جب کہ ہمارے پرامن مارچ میں رکاوٹ ڈالی گئی تو قانونی کارروائی کریں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں