امپورٹڈ حکومت نے مہنگی ترین ایل این جی خریدی، حماد اظہر

سابق وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر کا کہنا ہے کہ امپورٹڈ حکومت نے مہنگی ترین ایل این جی خریدی۔ 

امپورٹڈ حکومت نے گزشتہ ماہ ایک ساتھ 4 مہنگے ترین ایل این جی کارگو خریدے جس کا نتیجہ یہ نکلا کہ ایس این جی پی ایل کے لیے آر ایل این جی کی ڈسٹری بیوشن کی قیمت 6.21 ڈالر سے 21.831 ہوگئی جب کہ ایس ایس جی پی کے لیے 6.87 ڈالر سے 23.78 ڈالر تک ہوگئی۔

سابق وزیر توانائی نے اپنی ٹوئٹ میں مزید کہا کہ اس کا مطلب یہ ہوا کہ ایل این جی ٹیرف اور مہنگی بجلی کی پیداوار پر صنعتوں کے لیے گیس کی قیمت 40 فیصد زیادہ ہے۔

آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی ( اوگرا)  نے مئی کے لیے درآمدی ایل این جی کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا جس کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔

نوٹی فکیشن کے مطابق اوگرا نے سوئی ناردرن سسٹم کے لیے ایل این جی کی فی یونٹ قیمت میں 6.2152 ڈالر اضافہ کیا ہے جب کہ سوئی سدرن سسٹم پر ایل این جی کی قیمت میں 6.8772 ڈالر فی یونٹ اضافہ کیا ہے۔

نوٹیفکیشن  میں مزید کہا گیا ہے کہ سوئی ناردرن سسٹم پر ایل این جی کی نئی قیمت 21.8317 ڈالر فی یونٹ مقرر کی گئی جبکہ سوئی سدرن سسٹم پر ایل این جی کی نئی قیمت 23.7873 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو مقرر کی گئی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں