پاکستانیوں کے دورہ اسرائیل سے وزارت خارجہ کا لاعلمی کا اظہار

پاکستانی اور امریکی شہریوں پر مشتمل ایک وفد نے حال ہی میں اسرائیل کا سات روزہ دورہ کیا تاہم پاکستان کی وزارت خارجہ کے مطابق اسے اس بارے میں کوئی معلومات نہیں ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اسرائیل کا دورہ کرنے والے وفد نے اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ سمیت ملک کی اعلیٰ قیادت سے ملاقات کی جس میں ایسے پاکستانی بھی موجود ہیں جن کا تعلق میڈٰیا سے ہے اور ان میں سے ایک احمد قریشی ہیں جو قومی نشریاتی ادارے پاکستان ٹیلی ورژن (پی ٹی وی) سے منسلک ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر سابق وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے کہا کہ وہ احمد قریشی کو اسرائیل میں دیکھ کر محض اس لیے ہی حیران نہیں کہ وہ پی ٹی وی کے لیے کام کرتے ہیں بلکہ اس لیے بھی کہ وہ حساس نوعیت کے ریاستی اداروں سے وابستہ ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما نے مزید کہا کہ صحافی احمد قریشی ایک برس سے زائد عرصے سے اسرائیل نواز ایجنڈے کو ہوا دے رہے ہیں اور انہوں نے عمران خان کی آزاد خارجہ پالیسی کو نشانے پر رکھا ہوا ہے۔

اس حوالے سے خود صحافی احمد قریشی نے شیریں مزاری کے دعوے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ نہ وہ پی ٹی وی کے ملازم ہیں اور نہ ہی سرکاری ملازمت کرتے ہیں جب کہ یہ ایک پاکستانی نہیں بلکہ امریکی وفد ہے اور اس میں پاکستانی نژاد امریکی ہیں جو واشنگٹن کے ذریعے تل ابیب پہنچے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان کے پاسپورٹ پر واضح لکھا ہوتا ہے کہ اس پاسپورٹ پر ماسوائے اسرائیل دنیا کے کسی بھی ملک میں سفر کیا جا سکتا ہے ، اس کا مطلب یہ ہوا کہ کم سے کم گرین پاسپورٹ پر کوئی اسرائیل کا سفر نہیں کر سکتا، اسی وجہ سے اس دورے پر سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔

دوسری جانب وزارت خارجہ سے جب یہ سوال کیا گیا کہ پاکستانی شہریت رکھنے والے کچھ افراد اسرائیل کے دورے پر ہیں جن میں احمد قریشی بھی شامل ہیں، کیا ان کا یہ دورہ سرکاری اسائنمنٹ ہے۔

سوال کے جواب میں ترجمان وزارت خارجہ عاصم افتخار نے کہا کہ میرے پاس اس کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہیں۔

واضح رہے کہ اس دورے کا انتظام امریکی مسلم اینڈ ملٹی فیتھ ویمنز امپاورمنٹ کونسل کی پاکستانی نژاد امریکی خواتین رہنماؤں نے ’شراکا‘ کے ساتھ مل کر کیا جو عربوں اور اسرائیلیوں کے درمیان امن کو فروغ دیتی ہے اور اس وفد میں پاکستانی، بنگالی، امریکی اور ملائیشیا سے اراکین شامل ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں