ایس ایس سی پارٹ ون فیڈرل بورڈمیں اول پوزیشن حاصل کرنے والی ہونہارطالبہ عائشہ آصف سے مکالمہ

akhtarsardar.com

انٹرویو : مختار اجمل بھٹی

پاکستان میں کرونا وائرس کی وجہ سے تعلیمی سلسلہ کافی عرصہ تک معطل رہااور اس کا اثربلاواسطہ طالب علموں پر بھی پڑا لیکن اس سب کے باوجود کچھ طالب علم ایسے بھی تھے کہ جنھوں نے تعلیم پر اپنی بھرپور توجہ جاری رکھی اپنی شبانہ روز محنت اورمسلسل جدوجہد کی بدولت انھوں نے فیڈرل بورڈ کے امتحان میں ٹاپ پوزیشن حاصل کی انہی باہمت طالب علموں میں ایک نام کوالٹی سکول واہ کینٹ کی ہونہارطالبہ عائشہ آصف کا بھی ہے کہ جنھوں نے ایس ایس سی پارٹ ون میں 518نمبر حاصل کرکے بورڈ میں اول پوزیشن حاصل کی

ان کے ساتھ ہونے والی بات چیت میں انھوں نے بتایا کہ مجھے شروع سے ہی پڑھائی کا بہت شوق رہا ہے اور ہر کلاس میں پوزیشن حاصل کرتی آرہی ہیں میں نے جس طرح محنت سے امتحان کی تیاری کی تو مجھے اللہ پاک پر کامل یقین تھا کہ مجھ پر اللہ تعالیٰ کا فضل وکرم ہو گااور الحمد للہ میری بورڈ میں پہلی پوزیشن آئی اور یہ سب اللہ پاک کی خصوصی عطاء،والدین کی دعاؤں اور اساتذہ کی رہنمائی سے ممکن ہوا،اس پر میں جتنا بھی اللہ پاک کا شکر ادا کروں کم ہے پڑھائی کی روٹین کے بارے میں ان کاکہنا تھاکہ صبح نماز فجرکے بعد قرآن مجید کی تلاوت کرتی ہوں اور سکول جانے سے پہلے جو وقت ملتا ہے اس میں بھی پڑھتی رہتی ہوں جبکہ سکول سے واپسی پر پہلے ظہر کی نماز ادا کرتی ہوں اورپھر کھانا کھا کر سو جاتی ہوں جب سو کر اٹھتی ہوں تو عصر کی نماز کا وقت ہوچکا ہوتا ہے عصر کی نمازپڑھنے کے بعد پڑھائی کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے

ٹیچرز نے جو کچھ سکول میں پڑھایا ہوتا ہے اس کی دہرائی کرتی ہوں اور جو ٹیسٹ دیے ہوتے ہیں اس کی تیاری کرتی ہوں رات دیر تک پڑھنا میرے معمولات میں شامل ہے البتہ ٹیوشن کا سلسلہ نہیں ہے کیونکہ ہمارے سکول میں ٹیچرز بہت اچھے طریقے سے پڑھاتی ہیں اور مکمل رہنمائی کرتی ہیں اس لیے ٹیوشن پڑھنے کی ضرورت نہیں پڑتی البتہ جوکچھ سکول میں پڑھا ہے اس کو لازمی دہراتی ہوں اور سکول میں ہونے والے ٹیسٹوں کی اچھے طریقے سے تیاری کرتی ہوں پسندیدہ مشاغل کاذکر کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ عبادت کرنا یعنی نماز باقاعدگی سے پڑھنا،قرآن مجید کی تلاوت،اللہ کا ذکر کرنا اور دلجمعی و لگن کے ساتھ پڑھنا میرے پسندیدہ مشاغل ہیں سکول ٹیچرز کے بارے میں ان کا کہناتھا کہ سب ٹیچرز اچھی ہیں بڑی محنت،جانفشانی اور پیار ومحبت سے پڑھاتی ہیں

akhtarsardar.com

akhtarsardar.com

اگر کسی سٹوڈنٹ کو سمجھ نہ آرہی ہوتو اس پر غصہ کرنے کی بجائے اس کی تسلی و تشفی کرتی ہیں اور بہترین طریقے سے اس کو گائیڈ کرتی ہیں یہی وجہ ہے کہ سٹوڈنٹس بھی ٹیچرز کا بے حد احترام کرتے ہیں اور ان کی باتوں پر مکمل عمل کرتے ہیں مستقبل میں کیا بننے کا ارادہ ہے اس حوالے سے انھوں نے کہا کہ وہ تعلیم مکمل کرنے کے بعدسی ایس ایس کا امتحان پاس کرکے ملک وقوم کی خدمت کریں گی دوسرے طلباء کو پیغام میں ان کاکہناتھا کہ محنت اور مسلسل جدوجہد سے ہی انسان کو کامیابی ملتی ہے اس لیے اپنی زندگی کا کوئی نہ کوئی مقصد بنالیں اور پھر اس ٹارگٹ کو حاصل کرنے کے لیے حددرجہ محنت کریں اور اللہ تعالیٰ پر توکل رکھیں اللہ تعالیٰ آپ کی محنت کو ضائع نہیں فرمائے گا اور اس کا صلہ ضرور ملے گا

اس موقع پر ہونہار طالبہ عائشہ آصف کے والد ملک آصف پراچہ نے کہاکہ جب مجھے پتہ چلاکہ میری بیٹی نے بورڈ میں فرسٹ پوزیشن حاصل کی ہے تو میری خوشی دیدنی اور ناقابل بیان تھی میرے پاس الفاظ نہیں کہ میں ان محسوسات کو بیان کرسکوں بلاشبہ اللہ پاک نے کرم فرمایا اورمیری بیٹی نے میرا سر فخر سے بلند کر دیا اس کی کامیابی میں اس کے سکول اور اساتذہ کا بھی بڑا ہاتھ ہے میرے خیال میں بچیوں کے لیے پورے علاقہ میں اس سے بہترسکول نہیں بہت سے لوگ اس ادارے کاذکر اچھے الفاظ میں کرتے ہیں

انھوں نے والدین کو تلقین کی کہ ہمیشہ بچوں کے ساتھ نرم رویہ اختیارکریں اور انہیں دوستانہ ماحول فراہم کریں ان کی بات خندہ پیشانی سے سنیں تاکہ وہ آپ سے ہر بات شیئر کرسکیں انہیں فورس نہ کریں بلکہ ان کی رہنمائی کریں اور اچھے برے تمام پہلوؤں سے انہیں روشناس کرائیں اور فیصلہ سازی کاکام ان پر چھوڑ دیں اس طرح ان کے اندر خوداعتمادی بڑھے گی اور وہ زندگی کی دوڑ میں اطمینا ن،یقین اور یکسوئی کے ساتھ آگے بڑھیں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں